19

کیا سوال کسی بھی مفتی سے پوچھا جا سکتا ہے؟

مسئلہ بتانا ایک بہت بڑی شرعی ذمہ داری،اور انتہائی نازک وحساس کام ہے جس میں سائل کاسوال سمجھنا،اس کا مقصد پہچاننا اور اور اس کے زمانے ،مکان اور عرف کی واقفیت کے ساتھ ساتھ ، ملتی جلتی جزئیات میں امتیاز اور جواب میں مفتٰی بہٖ قول اختیار کرنا ،ایسے بہت سے امور ہیں جن کا ادراک ممارسۃ اور مسلسل تجربے کا متقاضی ہے، اور ان امور کی انجام دہی کسی مستند دارالافتاء سے وابستہ مفتی ہی کرسکتاہے، اس لیے سوال ہمیشہ مستند مفتی سے پوچھنا چاہئے۔ فقط واللہ اعلم

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں